I will not accept a weak government like in the past, Imran Khan

 

چیئرمین پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) عمران خان نے کہا ہے کہ ماضی کی طرح کمزور حکومت ملی تو قبول نہیں کروں گا۔

چیئرمین پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) عمران خان نے کہا ہے کہ ماضی کی طرح کمزور حکومت ملی تو قبول نہیں کروں گا۔

اسلام آباد کے صحافیوں سے گفتگو میں عمران خان نے کہا کہ ان کی حکومت کمزور تھی، ویسی حکومت اب ملی تو وہ کبھی قبول نہیں کریں گے۔انہوں نے کہا کہ وہ حکومت میں تھے تو ان پر بہت زیادہ دباؤ تھا، نیب اور عدالتیں ان کے اختیار میں نہیں تھیں۔پی ٹی آئی چیئرمین نے مزید کہا کہ حقیقی آزادی کےلیے فیصلہ کن مارچ اسی مہینے ہوگا ،آج مخالفین کی کوشش ہے کہ انہیں نااہل کروائیں اس لیے نت نئے مقدمات بنا رہے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ ہماری حکومت آئی تو پاکستان دیوالیہ ہوچکا تھا، پاکستان میں طاقتور شوگر، تیل اور بلڈر مافیا نے نظام پر قبضہ کر رکھا ہے۔عمران خان نے یہ بھی کہا کہ کرپٹ اشرافیہ نے مفادات کےلیے دستور و قانون کی پامالی کا کلچر پروان چڑھایا، میں نے ساری زندگی میرٹ پر کام کیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ فوری انتخابات ہی موجودہ سیاسی و معاشی بحران سے نجات کا واحد ذریعہ ہیں، یہ عوام کے اندر نہیں جا سکتے، اس لیے الیکشن سے بھاگ رہے ہیں۔پی ٹی آئی چیئرمین نے کہا کہ جب ہم سے حکومت چھینی گئی تو پاکستان میں ترقی کی شرح 6 فیصد تھی، موجودہ ٹولے نے 6 مہینے میں ہی پاکستان کو دیوالیہ کردیا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ ساڑھے 3 سالہ دور حکومت میں صرف 5 دن چھٹی کی وہ بھی جب مجھےکورونا ہوا، جب حکومت میں تھا تو مجھ پر بہت زیادہ پریشر تھا۔عمران خان نے الزام لگایا کہ شہباز شریف نے 16 ارب روپے کی چوری کی، لیکن حکومت حاصل کرنے کے بعد وہ کیسز سے بری ہوگئے۔

Advertisement


Advertisement